عالمی دہشتگرد افغانستان میں دوبارہ منظم ہوئے تو کارروائی کریں گے، امریکا

امریکا کا کہنا ہے کہ محسوس ہوتا ہے طالبان وعدوں کو پورا کرنے کے قابل نہیں عالمی دہشتگرد افغانستان میں دوبارہ منظم ہوئے تو کارروائی کریں گے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے واشنگٹن میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ محسوس ہوتا ہے طالبان وعدوں کو پورا کرنے کے قابل نہیں۔ خدشہ ہے افغانستان ایک بار پھر کہیں عالمی دہشتگردوں کی پناہ گاہ نہ بن جائے۔ عالمی دہشتگرد افغانستان میں دوبارہ منظم ہوئے تو کارروائی کریں گے۔

نیڈ پرائس کا کہنا تھا کہ خطے میں دہشتگردی کا مقابلہ کرنے کے لیے ہمارے پاس صلاحیتیں موجود ہیں۔ ایسے تمام اقدامات کیے جائیں گے جس سے ہمارے مفادات کا تحفظ ہو۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ خطے میں کالعدم ٹی ٹی پی سمیت دیگر گروہوں کو متحرک ہوتے دیکھا ہے۔ دیکھنا ہے کہ دہشتگرد افغانستان کو پاکستان پر حملوں کے لیے بطورلانچ پیڈ استعمال نہ کریں۔ خطے میں شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کرنے کیلیے پرعزم ہیں اور خطے میں دہشتگردی کے خطرات سے نمٹنے کیلیے جو ہوا کریں گے۔

نیڈ پرائس کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان خطے میں امریکا کا اہم شراکت دار ہے اور ان تعلقات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ باہمی دلچسپی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان سے انٹرنیشنل ملٹری ایجوکیشن اینڈ ٹریننگ پروگرام کے تحت تعاون جاری ہے۔ یہ تعاون خطرات سے نمٹنے کیلیے پاکستان کی صلاحیتوں کو بہتر بناتا ہے۔



from ARYNews.tv | Urdu – Har Lamha Bakhabar https://ift.tt/bLprKdF جہانزیب علی

0 Comments:

Post a Comment